23

سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں پاک فوج کی امدادی سرگرمیاں جاری: آئی ایس پی آر 



سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں پاک فوج کی امدادی سرگرمیاں جاری: آئی ایس پی آر 

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاک فوج کے ادارہ تعلقا ت عامہ (آئی ایس پی آر) نے بیان جاری کرتے ہوئے کہاہے کہ سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں پاک فوج کی امدادی سرگرمیاں جاری ہیں، بلوچستان کے علاقے اوتھل کے 4 دیہات سے 2300 افرادکو محفوظ مقام پرمنتقل کیا گیا ہے ، متاثرہ افرادکوخوراک اورشیلٹرفراہم کیاجارہاہے۔

تفصیلات کے مطابق آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کر دہ بیان میں بتایا گیا کہ کوئٹہ کراچی شاہراہ این 25 ٹریفک کیلئے کھول دی گئی،شاہراہ پل ٹوٹنے کے باعث 4 مقامات پربندہوئی تھی، بلوچستان خصوصاًلسبیلہ میں ٹیلی مواصلاتی رابطہ بحال، کر دیا گیا ہے ، سیلاب سے لسبیلہ،کیچ،کوئٹہ،سبی،خضدار،کوہلومیں 3953 گھر تباہ ہو گئے ہیں۔ حب،گڈانی،بیلہ اورمگسی میں 5 میڈیکل کیمپ لگائے گئے گوادرمیں علاقوں سے پانی کااخراج جاری ہے ،گندھاواکاجھل مگسی سے رابطہ بحال کر دیا گیا ہے ۔

جھل مگسی میں ہیلی کاپٹروں سے 1.3 ٹن امدادی سامان اورادویات پہنچائی گئیں ، جھل مگسی کی 2 سڑکوں کی بحالی کاکام جاری ہے ،200 افرادمحفوظ مقام پرمنتقل کر دیا گیاہے ، سیلابی ریلے کے باعث بندکوئٹہ،زیارت روڈکھول دیاگیا، قلعہ سیف اللہ سیلابی پانی کی زدمیں ہےتاہم ریسکیواورریلیف ٹیمیں امدادی کاموں میں مصروف عمل ہیں۔

 اگھورمیں بندکوسٹل ہائی وے کوٹریفک کیلئے کھول دیاگیا، جی اوسی نے اامدادی سرگرمیوں کی نگرانی کیلئے بیلہ اورگردونواح کادورہ کیا ،ژوب میں ایف سی اورسول انتظامیہ نے موبائل فیلڈمیڈیکل کیمپ لگایا،میڈیکل کیمپ میں 1570 مریضوں کاعلاج کیاگیا،۔کراچی میں نکاسی آب کیلئے 58 ڈی واٹرنگ ٹیمیں لگائی گئیں، ٹھٹھہ میں گھاروگرڈاسٹیشن سے آرمی ڈی واٹرنگ ٹیموںنے پانی نکالا،جامشورومیں 300 افرادکومحفوظ مقام پرمنتقل کیا گیا ،۔ پاک فوج نے جامشورومیں ریلیف کیمپ قائم کردیا ہے ، لٹھ ڈیم بھرنے سے ایم 9 شاہراہ مختلف مقامات پرزیرآب ہے ۔ دادو،خیرپورمیں راشن اورادویات فراہم کی جارہی ہیں

مزید :

قومی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں