26

جنوبی کوریا میں تیسری جماعت کے طالب علموں نے پہلی جماعت کے بچوں کو جنسی ہراسگی کا نشانہ بنا دیا

جنوبی کوریا میں تیسری جماعت کے طالب علموں نے پہلی جماعت کے بچوں کو جنسی …

  

سیول (رضا شاہ) جنوبی کوریا کے شہر تھیگو کے ایک ہائی سکول کے شعبہ ایتھلیٹک سے جنسی طور پر ہراساں کیے جانے کی رپورٹ موصول ہونے پر پولیس اور تعلیمی حکام اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ پولیس کے مطابق ایک رپورٹ موصول ہوئی تھی کہ ایک ہائی سکول کی دوسری اور تیسری جماعت کے تین طالب علم اسی سکول کے پہلی اور دوسری جماعت کے طالب علموں کو جنسی طور پر ہراساں کرتے ہیں۔ پہلے اور دوسرے سال کے پانچ طالب علموں نے پولیس میں شکایت درج کرائی ہے جس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ تیسری جماعت کے دو طالب علموں نے رواں سال مارچ سے لے کر اگست کے اوائل تک اپنے جونیئرز کو جنسی طور پر ہراساں کیا اور اکثر بدسلوکی اور گالی گلوچ وغیرہ کا بھی استعمال کیا۔ اسکول نے اس واقعے کے حوالے سے بتایا ہے کہ انہوں نے پولیس کو تین مختلف کھیلوں کے کوچوں کی تحقیقات کا بھی کہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ایک ایتھلیٹک طالب علم نے گزشتہ ماہ کے اوائل میں کوچنگ اسٹاف کو جنسی ہراسگی کی اطلاع دی تھی لیکن کوچنگ اسٹاف نے متاثرین اور جنسی ہراسگی کے ملزمان کو بلایا اور اسکول کو اطلاع دیے بغیر خود ہی مسئلہ حل کرنے کی کوشش کی۔ ایجوکیشن آفس کے ایک اہلکار نے بتایا ہے کہ فی الحال ہم متاثرین اور جنسی ہراسگی کے ملزمان کو ہر ممکن حد تک الگ الگ رکھے ہوئے ہیں اور تحقیقات مکمل ہونے پر کارروائی کا ارادہ رکھتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں