36

بھارتی شخص جس نے احتجاجاً نہانا چھوڑ دیا کئی عشرے بیت گئے



بھارتی شخص جس نے احتجاجاً نہانا چھوڑ دیا، کئی عشرے بیت گئے

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین کے خلاف جرائم اور جانوروں پر مظالم سمیت ہر طرح کے ظلم پر ہر انسان دکھی ہوتا ہے اور ہر ایک خواہش کرتا ہے کہ ایسے جرائم کا دنیا سے خاتمہ ہو جائے مگر آپ کو یہ سن کر حیرت ہو گی کہ بھارت میں ایک شخص نے ان جرائم کے خاتمے تک احتجاجاً نہ نہانے کا اعلان کر رکھا ہے اور اسے نہائے ہوئے اب 22سال کا عرصہ بیت چکا ہے۔ 

نیوز ویب سائٹ’پروپاکستانی‘ کے مطابق اس 62سالہ شخص کا نام دھرم دیو رام ہے۔ وہ ریاست چھتیس گڑھ کا رہائشی ہے۔ اس نے 2000ءمیں بنیادی طور پر تین جرائم کے خلاف احتجاجاًاس وقت تک نہ نہانے کا اعلان کیا، جب تک ان جرائم کا بھارت سے خاتمہ نہیں ہو جاتا۔ یہ تین جرائم خواتین کے خلاف گھریلو تشدد، جانوروں پر ظلم اور زمینی تنازعات شامل ہیں۔ 

دھرم دیو کے ہمسایوںنے بھی تصدیق کی ہے کہ وہ 2000ءکے بعد آج تک نہیں نہایا۔ دو دہائیوں سے زائد عرصہ نہ نہانے کے باوجود دھرم دیو کی صحت حیران کن طور پر بہترین ہے، جس پر طبی ماہرین بھی حیران ہیں۔ اس کا کئی بار طبی معائنہ کرایا گیا ہے لیکن اسے کوئی بیماری لاحق نہیں ہوئی۔ دھرم دیو کا آج بھی کہنا ہے کہ جب تک بھارت سے یہ تین جرائم ختم نہیں ہوتے، وہ نہیں نہائے گا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں