35

امریکی ایوان نمائندگی کی سپیکر نینسی پلوسی کی تائیوان آمد کے بعد 27 چینی لڑاکا طیارے تائیوان کی فضائی حدود میں گھس گئے تائیوانی حکام کا مؤقف بھی آگیا



امریکی ایوان نمائندگی کی سپیکر نینسی پلوسی کی تائیوان آمد کے بعد 27 چینی …

تائپی(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی ایوان نمائندگان کی سپیکر نینسی پلوسی کے دورۂ تائیوان کے بعد چین نے اپنے 27لڑاکا طیارے تائیوانی فضائی حدود میں بھیج دیئے اور میڈیا رپورٹس کے مطابق چین تائیوان کے گرد موجود سمندروں میں فوجی مشقوں کی تیاری بھی کر رہا ہے۔” انڈیا ٹائمز “کے مطابق تائیوانی حکام کی طرف سے چین کے 27لڑاکا طیاروں کے اپنی فضاءمیں داخل ہونے کی تصدیق کی گئی ہے۔ 

تائیوانی وزارت دفاع کی طرف سے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ کے ذریعے بتایا گیا کہ 27پی ایل اے ایئرکرافٹ 3اگست 2022ءکو تائیوان کی فضائی حدود میں داخل ہوئے۔ ان طیاروں میں 6جے 11، 5جے 16اور 16ایس یو 30طیارے شامل تھے، جو تائیوانی فضائیہ کے کاﺅنٹر کرنے پر واپس چلے گئے۔برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق نینسی پلوسی کی طرف سے کیا گیا یہ دورہ کئی دہائیوں بعداس طرح کے کسی اعلیٰ امریکی عہدیدار کا تائیوان کا پہلا دورہ تھا، جس پر چین کی طرف سے سخت احتجاج کیا گیا۔

اپنے دورے کے دوران نینسی پلوسی نے کہا کہ ”تائیوان اس خطے میں جمہوریت کے لیے دفاعی لائن کا کردار ادا کرے گا۔امریکہ تائیوان کو کبھی تنہا نہیں چھوڑے گا۔“نینسی پلوسی صدارتی محل میں صدر سائے انگ وین سے ملاقات کے بعد ایک تقریب سے خطاب کر رہی تھیں۔ نینسی پلوسی منگل کو رات گئے تائیوان پہنچیں، جس کے بعد تائیوان کی طرف سے چین کے لڑاکا طیاروں کے اپنی فضائی حدود میں داخل ہونے کا دعویٰ کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق تائیوان کے گرد چینی فوج کی جنگی مشقیں جمعرات سے شروع ہو رہی ہیں۔واضح رہے کہ چین تائیوان کو اپنا حصہ مانتا ہے تاہم تائیوان خود کو ایک خودمختار ملک قرار دیتا ہے۔ امریکہ سمیت دیگر مغربی و یورپی طاقتیں بھی تائیوان کی خودمختار حیثیت کو تسلیم کرتی ہیں اور چین اور تائیوان کے اس تنازع میں تائیوان کی پشت پناہی کر رہی ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں