27

امریکہ میں  وسط مدتی انتخابات   کیلئے  اشتہارات کی مد میں 3.6 بلین ڈالر خرچ کئے جا چکے رپورٹ 



امریکہ میں  وسط مدتی انتخابات   کیلئے  اشتہارات کی مد میں 3.6 بلین ڈالر خرچ …

نیویارک (طاہرمحمود چوہدری سے) امریکہ میں رواں سال نومبر میں ہونے والے وسط مدتی انتخابات کے حوالے سے ایک جائزہ رپورٹ کے مطابق الیکشن مہم  پر اشتہارات کی مد میں ریکارڈ اخراجات کیے جا رہے ہیں جو اب تک تقریبا 3.6 بلین ڈالرز ہیں ۔

 تجزیاتی فرم ‘ایڈ امپکیٹ’ کی طرف سے جاری کردہ تازہ اعداد و شمار کے مطابق رواں سال اب تک سیاسی اشتہارات پر تقریباً 3.6 بلین ڈالر خرچ کیے جا چکے ہیں جس نے 2022ءکے انتخابات کو اشتہاری اخراجات کے لحاظ سے سب سے بڑے وسط مدتی انتخابات بنا دیا ہے، جبکہ 2018 کے انتخابات میں کیے گئے اخراجات کا ریکارڈ بھی ٹوٹ گیا ہے. 

 نئے اعداد و شمار کے مطابق 2022ء میں ڈیجیٹل، سیاسی اور مسائل کے حوالے سے اشتہارات پر اب تک خرچ کیے گئے ہیں ،  700 ملین ڈالرز میں سے تقریباً نصف ٹی وی اشتہارات پر خرچ کیے گئے ہیں جبکہ مجموعی طور پر ایک اندازے کے مطابق اس سال منسلک ٹی وی اشتہارات پر 1.5 بلین ڈالر خرچ کیے جائیں گے، جو کہ گوگل اور فیس بک پر خرچ کیے گئے 1.3 بلین سے زیادہ ہے. 

سیاسی اشتہارات اخراجات کے لحاظ سے سب سے بڑے سٹریمنگ پلیٹ فارمز کامکاسٹ کی ایکس فینٹی سٹریمنگ کو 15 فیصد، وائی زیوز واچ فری کو 15 فیصد، سپیکٹرم سٹریمنگ 14 فیصد اور ڈائریکٹ ٹی وی سٹریمنگ کو 13 فیصد اشتہارات ملے ہیں. دیگر سٹریمنگ ڈوائسیز اور ایپس میں راکو کو  6  فیصد، یو ٹیوب کو 5  فیصد اور ایمزان فائر کو  3  فیصد  ہیں  جبکہ ٹک ٹاک اور ٹوئیٹر نے اپنے پلیٹ فارمز پر سیاسی اشتہارات نہیں چلائے۔

مزید :

بین الاقوامی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں