19

 ہم سب کو ٹیکس تو دینا ہی پڑے گا چھوٹےدکانداروں سے 36 ہزار روپے سالانہ ٹیکس مانگ رہا ہوں مفتاح اسماعیل



 ہم سب کو ٹیکس تو دینا ہی پڑے گا، چھوٹےدکانداروں سے 36 ہزار روپے سالانہ ٹیکس …

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ ہم سب کو ٹیکس تو دینا ہی پڑے گا، چھوٹے دکانداروں سے  36 ہزار روپے  سالانہ ٹیکس مانگ رہاہوں ۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ  ہم نےپاکستان کودیوالیہ ہونےسےبچایا،جلد روپے سے پریشر ختم ہو جائے گا   پھر چیزیں آسان ہو جائیں گی ،  ہم درآمدات پرپابندیاں مرحلہ وارختم کریں گے،جولائی میں درآمدات  کم ہیں ، اس کی ادائیگیاں بھی کم ہوں گی، رواں ماہ 5ملین ڈالرکی درآمدات ہوئیں،  جون میں 3.8بلین کی پٹرولیم مصنوعات خریدیں، درآمدات میں کمی آئی ہےجوکہ خوش آئندہے۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ عمران خان نے نقصان پر پٹرول پر سبسڈی دی ، انہوں نے آئی ایم ایف معاہدے کی خلاف ورزی کی ،  یوٹرن لے کر  اپنے لوگوں کو ایمنسٹی دی  بعد میں کہتے ہیں تھوڑی سی منی لانڈرنگ کی تو کیا ہوا، پی ٹی آئی حکومت نےبجٹ خسارےکوبڑھایا،50لاکھ گھروں کادعویٰ کرنیوالےنے500گھرنہیں بنائے، شاہدخاقان عباسی نےایل این جی کےسستےٹرمینل لگائے، عمران خان حکومت نےبجلی کےمنصوبوں میں سرمایہ کاری نہیں کی،بتایاجائےعمران خان نےکیامعاشی اصلاحات کیں؟۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ  کوشش کررہےہیں مقامی صنعت کومزیدفروغ ملے، ملک کی برآمدات بڑھانےکیلئےکوشش کررہےہیں، امپورٹڈگاڑیوں کی درآمدپرپابندی ہے،ہم پرجوپریشرتھاوہ اگست سےکم ہوجائےگا، جتنی گندم چاہیےاس سےزیادہ موجودہے، الیکشن کمیشن سےاپیل ہےفارن فنڈنگ کیس کافیصلہ سنایاجائے،  عمران خان نےملک کےتمام شعبوں کوتباہ کیا۔

مزید :

اہم خبریں -بزنس –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں