20

کسی بھی غیر ملکی سے فنڈنگ حاصل کرنا غیر قانونی الیکشن کمیشن پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس کا جلد فیصلہ کرے شاہد خاقان عباسی



کسی بھی غیر ملکی سے فنڈنگ حاصل کرنا غیر قانونی ،الیکشن کمیشن پی ٹی آئی ممنوعہ …

 اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان مسلم لیگ (ن ) کے رہنما شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ کسی بھی غیر ملکی شخص یا کمپنی سے فنڈنگ لینا غیر قانونی ہے الیکشن کمیشن پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی )ممنوعہ فنڈنگ کیس کا فیصلہ جلد سنائے ۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق اسلام آباد میں الیکشن کمیشن کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ہمارے ملک کا قانون کسی سیاسی جماعت کوکسی فارن گروپ سے پیسے لینےکی اجازت نہیں دیتا،فارن فنڈنگ کی ایک بڑی رقم ملک میں نہیں آئی، اب بھی ملک کے باہر اکاؤنٹس میں موجود ہے، ہم نے آج درخواست کی ہے الیکشن کمیشن سے کہ عوام کو پتا چلے عمران خان کس سے پیسے لیتا رہا، کل فنانشل ٹائمز جیسے ادارے نے کہا کہ عارف نقوی نے لندن میں کرکٹ میچ کروائے، عارف نقوی نے کہا کہ میچ سے حاصل کروڑوں روپے چیریٹی پر خرچ ہوں گے مگر عارف نقوی کی کمپنی سے 55 کروڑ کی رقم پی ٹی آئی اکاؤنٹس میں بھیجی گئی۔

 لیگی رہنما کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کی جماعت نے امریکی کمپنیوں سے پیسے وصول کیے اور پی ٹی آئی کی جانب سے الیکشن کمیشن کو کوئی ثبوت فراہم نہیں کیے گئے، کیلیفورنیا اور ٹیکساس کی کمپنیوں سے پیسے وصول کرکے غیرجانبدار فیصلے نہیں ہوسکتے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر عمران خان کے ہاتھ صاف تھے تو پہلے دن ہی حساب دیتے، آج بھی عمران خان الیکشن کمیشن پر حملہ کر رہا ہے، پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس میں اکبر ایس بابر نے ٹھوس ثبوت پیش کیے لیکن پی ٹی آئی 8 سال سے اس کیس سے بھاگ رہی ہے، پی ٹی آئی نے 8 سال میں ہرطرح کا دباؤ ڈال کرفیصلہ نہ آنے دیا، ہر حربہ استعمال کرکے عمران خان الیکشن کمیشن پر دباؤ بڑھا رہا ہے، ہم نے الیکشن کمیشن سے ملاقات میں درخواست کی کہ پی ٹی آئی فنڈنگ کیس میں فیصلہ دیں۔

مزید :

اہم خبریں -قومی –




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں