40

سر جُڑے جڑواں بچے کامیاب آپریشن کے بعد علیحدہ – ایکسپریس اردو

تین سالہ برنارڈو اور آرتھر لیما کے ریو ڈی جنیرو میں بچوں کے سرجن نُور الاویس جیلانی کی زیرِ نگرانی متعدد آپریشن ہوئے

ریو ڈی جنیرو: برازیل میں دو سر جُڑے جڑواں بچوں کو ایک برطانوی سرجن نے کامیاب آپریشن کے بعد علیحدہ کر دیا۔

تین سالہ برنارڈو اور آرتھر لیما جُڑے ہوئے سر کے ساتھ پیدا ہوئے تھے اور ان بچوں کے ریو ڈی جنیرو میں بچوں کے سرجن نُور الاویس جیلانی کی زیرِ نگرانی متعدد آپریشن ہوئے۔

دونوں بچوں کے سات آپریشن ہوئے اور آخری آپریشن 33 گھنٹوں سے زیادہ طویل چلا جس میں 100 کے قریب طبی عملہ شامل تھا۔

ان سرجریوں کی رہنمائی ڈاکٹر جیلانی نے کی جبکہ ان کے ساتھ اسٹاڈوئل انسٹیٹیوٹ کے شعبہ سرجری کے سربراہ ڈاکٹر گیبریئل موفریج بھی شامل تھے۔ ڈاکٹروں نے بچوں کا آپریشن کرنے سے قبل ورچوئل ریئلٹی کا استعمال کرتے ہوئے مہینوں تک تکنیک کی آزمائش کی۔

ڈاکٹر جیلانی نے اس آپریشن کو ڈاکٹروں کی زبردست کامیابی قرار دیا

ڈاکٹر جیلانی نے اس آپریشن کو ڈاکٹروں کی زبردست کامیابی قرار دیا

ڈاکٹر جیلانی نے اس آپریشن کو ڈاکٹروں کی زبردست کامیابی قرار دیتے ہوئے کہا کہ برنارڈو اور آرتھر کی کامیابی کے ساتھ علیحدگی ریو میں موجود ٹیم کا زبردست کارنامہ ہے۔ نہ صرف ان بچوں اور ان کے والدین کو ایک نیا مستقبل دیا گیا ہے بلکہ مقامی ڈاکٹروں کی ٹیم کو وہ صلاحیت اور اعتماد بھی دیا گیا ہے جس سے وہ مستقبل میں دوبارہ ایسا پیچیدہ کام کرسکیں گے۔

اس آپریشن کی معاونت جیمینائی ان ٹوائنڈ نے کی۔ یہ ایک خیراتی ادارہ ہے جس کو ڈاکٹر جیلانی نے قائم کیا تاکہ جڑے ہوئے بچوں کو علیحدہ کرنے کے لیے مالی امداد جمع کی جاسکے۔




کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں