12

ڈائریکٹریٹ جنرل غیر منقولہ جائیداد آپریشنل نہیں ہوسکا – ایکسپریس اردو

آئی ایم ایف دباؤ پر ایف بی آر نے ڈائریکٹریٹ جنرل کو ممبر ان لینڈ ریونیو آپریشن کے ماتحت کر دیا (فوٹو: فائل)

اسلام آباد: ڈائریکٹریٹ جنرل غیر منقولہ جائیداد چار سال کا عرصہ گزرنے کے بعد بھی آپریشنل نہیں ہوسکا۔

وفاقی حکومت کی جانب سے رئیل اسٹیٹ سیکٹر میں انڈر رپورٹنگ، ٹیکس چوری، غیر منقولہ جائیدادکی مس ڈکلیئریشن روکنے، کم ویلیو ظاہر کرنے والوں کی جائیداد زبردستی خریدنے کیلیے قائم کردہ ڈائریکٹریٹ جنرل غیر منقولہ جائیداد چار سال کا عرصہ گزرنے کے بعد بھی آپریشنل نہیں ہوسکا، نہ تو رولز جاری ہو سکے اور نہ ہی الگ سے ٹربیونلز قائم ہو سکے ہیں البتہ آئی ایم ایف کے دباؤ پر چار سال بعد فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ڈائریکٹریٹ جنرل غیر منقولہ جائیداد کو ممبر ان لینڈ ریونیو آپریشن کے ماتحت کردیا ہے جس کا اطلاق یکم جولائی سے کیا گیا ہے۔

’’ایکسپریس‘‘کو دستیاب دستاویز کے مطابق ایف بی آر نے اپنے نوٹیفکیشن میں بتایا ہے کہ ڈائریکٹریٹ جنرل غیر منقولہ جائیداد ایف بی آر کے ممبر ان لینڈ ریونیو آپریشن کو رپورٹ کیا کرے گا۔

اس بارے میں جب فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے پہلے ڈائریکٹر جنرل غیر منقولہ جائیداد تنویز ملک سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ ایف بی آر کی طرف سے انہیں پہلے ڈی جی غیر منقولہ جائیداد کا اضافی چارج دیا گیا تھا، ان کی ریٹارئمنٹ ہوگئی اور ریٹائرمنٹ کے بعد ڈائریکٹریٹ جنرل ہی ختم کردیا گیا تھا۔

ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ غیر منقولہ جائیداد کی ویلیو ایشن اور ٹیکس سے متعلقہ تنازعات کیلئے الگ سے ایپلٹ ٹربیونل قائم کیا جائیگا جہاں غیر منقولہ جائیداد کے ٹیکس سے متعلقہ کیسوں بارے اپیل دائر ہو سکیں گی۔




اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں